سینئر نائب صدر پاکستان مسلم لیگ ن الریاض چوہدری اکرام کی طرف سے سحری کا اہتمام

الریاض – پاکستان مسلم لیگ ن الریاض کے نائب صدر اور مشہور و معروف ہر دل عزیز کاروباری شخصیت چوہدری اکرام کی طرف سے ماہ رمضان کے بابرکت مہینے میں سحری کی پروقار تقریب کا انعقاد کیا گیا، تقریب کے مہمان خصوصی نائب امیر مرکزی جماعت اسلامی ڈاکٹر فرید احمد پراچہ تھے، تقریب میں اہالیان ریاض کے معززین اور پاکستانی کمیونٹی کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ اس خوبصورت تقریب کا آغاز تلاوت قرآن پاک سے کیا گیا اور بعد ازاں شہر ریاض کی ہر دل عزیز شخصیت اور پاکستان مسلم لیگ ن الریاض کے ایکزیکٹو ممبر امتیاز احمد نے اپنے خوبصورت انداز میں ماہ رمضان کی فضیلت پر روشنی ڈالی اور میزبانی کے فرائض سرانجام دیے، ان کا کہنا تھا کہ پاکستان مسلم لیگ ن الریاض کی روایت رہی ہے کہ ہر سال ماہ رمضان میں زیادہ تر سحری تمام دوست مل کر اکھٹے کرتے ہیں اور اس روایت کا سہرہ صدر پاکستان مسلم لیگ ن الریاض خالد اکرم رانا کو جاتا ہے کہ جنہوں نے تمام دوستوں کو موتیوں کی مانند ایک دھاگے میں پروئے ہوا ہے اور یہ بات ان کی قائدانہ صلاحیتوں کا منہ بولتا ثبوت ہے کہ پچھلے چند سالوں سے یہ سلسلا روا دواں ہے، ان کا مزید کہنا تھا کہ رمضان کا مہینہ خیر و برکت کا مہینہ ہے، ماہ رمضان مسلمان کو مسلمان بن کر اپنے اعمال کو اللہ تعالی کی خوشنودی کے مطابق ڈھالنے کا مہینہ ہے، پاکستان مسلم لیگ ن الریاض کے نائب صدر اور تقریب کے میزبان چوہدری اکرام نے اپنے خطاب میں تمام آنیوالے مہمانوں کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ ماہ رمضان دولت مند کو اپنی دولت کے زریعے اپنے رب کی خوشنودی حاصل کرنے کا اور غریب کو اپنی غریبی کے باوجود نیک اعمال کرنے کا مہینہ ہے،الحمد اللہ ایک بار پھر ہم سب کو رحمتوں کا مہینہ میسر آیا، مغفرت کی سبیل لگا دی گئی اور پکارنے والا پکارتا ہے کہ ہے کوئی مانگنے والا جو مجھ سے مانگے اور میں اس کو دوں، ہے کوئی اپنے گناہوں کی معافی مانگنے والا کہ میں اس کو معاف کروں۔ تقریب کے مہمان خصوصی نائب مرکزی صدر جماعت اسلامی ڈاکٹر فرید احمد پراچہ کا کہنا تھا کہ اب بھی وقت ہے کہ ہمیں صرف اور صرف پاکستان کے متعلق سوچنا چاہیے، اوورسیز پاکستانیز ملک کی ترقی و خوشحالی کے لئے اہم کردار ادا کر رہے ہیں، پاکستان کے موجودہ حالات پر بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حکومت کسی بھی جماعت کی ہو لیکن پاکستان کی ترقی کے لئے صحت اور تعلیم پر خصوصی توجہ دینا بہت ضروری ہے اور اسی کی بدولت ہم ترقی یافتہ ملکوں کی دوڑ میں کھڑے ہو سکتے ہیں، موجودہ حالات کا واحد حل جمہوریت کی بحالی ہے اور اداروں کا کام سیاسی معاملات میں مداخلت کرنا ہرگز نہیں۔ سوشل میڈیا کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ ہمیں چاہیے کہ مثبت سوچ کو فروغ دیں اور اسی میں ہم سب کی بھلائی ہے، پاکستان کی ترقی اور تعمیر کے لیے نظام مصطفی کا نفاز لازم ہے وہ چاہت کوئی بھی پارٹی لائے کیونکہ یہ دین ہی ہے جو ہر مسلمان کو پانچ بار ایک صف میں کھڑا کر دیتا ہے اور جب دین آئے گا تو اس کا مثبت اثر ہماری زندگیوں اور معاشرے پر بھی پڑے گا، انہوں نے اس پرتکلف تقریب کے انعقاد پر چوہدری اکرام کا شکریہ ادا کیا۔ پاکستان مسلم لیگ ن الریاض کے صدر خالد اکرم رانا نے اپنے خطاب میں کہا کہ اللہ سبحان و تعالی ہمیں اس بابرکت مہینے کی سعادتیں حاصل کرنے کی توفیق عطا فرمائے، پاکستان مسلم لیگ ن الریاض نے اس سال بھی اپنی روایات کو برقرار رکھتے ہوئے سحر یوں کا اہتمام کیا ہے جس میں پارٹی کارکنوں کے علاوہ دوسری سیاسی، سماجی اور دینی جماعتوں بمشول پاکستانی کمیونٹی کو بھی مدعو کیا جاتا ہے اور دینی باتوں کے علاوہ کمیونٹی کی فلاح و بہبود کے موضوع بھی زیر بحث لائے جاتے ہیں تاکہ پاکستانی کمیونٹی کی بہتر طریقے سے خدمت ہو سکے، اس امر میں انہوں نے صدر پاکستان مسلم لیگ ن یوتھ ونگ راجہ یعقوب کی اور ان کی پوری ٹیم کی کمیونٹی کے لئے خدمات کو سراہا، انہوں نے ڈاکٹر فرید پراچہ کی بات کی تائید کی کہ پاکستان میں جمہوریت کا تسلسل ہی ہماری ترقی کا ضامن ہے، ۲۰۱۳ سے لیکر آج تک مسلم لیگ ن کی حکومت نے اپنے قائد کی پالیسیوں کی بدولت بہت سارے منصوبے مکمل کئے اور ہمیں اپنے قائد میاں نواز شریف پر بھرپور اعتماد ہے۔ تقریب میں پاکستان مسلم لیگ ن سعودی عرب کے سرپرست اعلی چوہدری عبدالمجید، نائب صدر رانا اشرف، جنرل سیکرٹری ناصر محمود ارائیں، سردار شعیب، محمود ڈوگر، راجہ یعقوب، سینیئر رہنما پاکستان پیپلز پارٹی اسحاق میمن، ناظم اعلی جمیعت اہل حدیث الریاض فیصل علوی، حلقہ فکر قدم کے روح رواں ڈاکٹر ریاض، بزم ریاض کے صدر ریاض راٹھور، موٹیویشنل سپیکر اور ہر دل عزیز شخصیت تصدق گیلانی، پاکستان پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما اصغر قریشی، مشہور بزنس مین چوہدری بشیر، مجلس پاکستان کے صدر رانا عبدالراوف، سینیئر رہنما مسلم لیگ ن ڈاکٹر سعید احمد، امین تاجر، عمر فاروق، ملک عصمت، ملک بابر کے علاوہ پاکستانی کمیونٹی کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔

Facebook Comments