ریاض کرکٹ لیگ کی جانب سے گرینڈ کرکٹ فینالے کا شاندار انعقاد

الریاض ۔ ریاض کرکٹ لیگ کی جانب سے ” گرینڈ فینالے ” منعقد ہوا جس میں سینکڑوں کرکٹ کے کھلاڑیوں کے علاوہ سفارت خانہ پاکستان کے کیمونٹی ویلفیئر اتاشی محمود لطیف بطور مہمان خصوصی شریک ہوئے، جبکہ دیگر مہمانوں میں ڈپٹی پیٹرن انچیف جواد الخلیفہ،چیف ایگزیکٹو آفیسر سلمان جواد الخلیفہ، صدر ریاض کرکٹ لیگ حنیف بابر، چیف آپریٹنگ آفیسر محمد رئیس،نائب صدرعرفان صدیقی، جوائنٹ سیکرٹری سید ادریس، پبلک ریلیشن آفیسر رضوان عظمت، گراونڈ انچارج عبدالرحمن صدیقی، میڈیکل آفیسر ڈاکٹر محمد ادریس، سٹیٹ ایڈمن سلمان قریشی، ایڈوائزر آر سی ایل رانا عرفان، سپانسرز میں سے ساوتھ ایشن کیمونٹی پارٹنر فار ویسٹرن یونین انور حسین خان، منیر احمد شاد نے شرکت کی جبکہ کیمونٹی عمائدین میں سے قاضی اسحاق میمن، عبداللہ الشراری، ڈاکٹر سعید احمد وینس، خالد اکرم رانارشید حیات خان، تصدق گیلانی، ڈاکٹر طارق عزیز، چوہدری مبین، افتخار احمد خان اور دیگر نے شرکت کی،مقامی ہوٹل کے ویسع و عریض ہال میں کرکٹ کے کھلاڑیوں نے خوب رنگ جمایا،پاکستان، انڈیا، بنگلہ دیش اور سری لنکا سے تعلق رکھنے والے کھلاڑیوں نے گرینڈ فینالے کو ہمیشہ کے لئے یادگار بنا دیا، ریاض کرکٹ لیگ کے صدر حنیف بابر نے اپنے ابتدائی خطاب میں کہا کہ یہ اپنی نوعیت کی منفرد تقریب ہے جس میں پورا سیزن کھیلنے والے تمام تر کھلاڑی جمع ہیں،ہمارا مقصد یہی تھا کہ ہم اپنے کھلاڑیوں کی اچھے اور بھرپور انداز میں حوصلہ افزائی کریں، جبکہ آر سی ایل اور ویسٹرن یونین کی جانب سے ٹی ٹین، ٹی ٹوئنٹی، انٹراسٹی اور بحرین ٹور جیسے انٹرنیشنل میچز کا انعقاد بھی ممکن بنایا جا چکا ہے جس سے ہمارے حوصلے مزید بلند ہوئے ہیں، اور اب ہم کھلاڑیوں کی دلچسپی کو دیکھتے ہوئے دمام بارہ نئی گراونڈز بنانے جا رہے ہیں، جبکہ ریاض شہر کے اندر نیٹ پریکٹس کے لئے بھی گراونڈز کے اندر چار مقامات پر نیٹ لگائے جا رہے ہیں تاکہ کھلاڑی اچھے طریقے سے پریکٹس کر سکیں،اس موقعہ پر جواد الخلیفہ کا کہنا تھا کہ وہ کرکٹ کے فروغ اور کھلاڑیوں کو بہتر سہولیات فراہم کرنے کے لئے ہمیشہ تعاون کرتے رہیں گے،تقریب میں پورا سال مختلف ایونٹس میں کھیلنے والی ٹیموں اور ان کے کھلاڑیوں کو انعامات دینے کا سلسلہ شروع ہوا تو ویسٹرن یونین ٹی ٹونٹی ٹورنامنٹ کے بیسٹ باولر کے ایوارڈ محمد مبین، محمد اظہر، سید معصوم شاہ، وسیم پاشا،ابراہیم خان کودیئے گئے، ریاض کرکٹ لیگ کے ٹی ٹین ٹورنامنٹ کے بیسٹ باولرز تصید، محمد آصف، انعام خان، فیاض خان اور راشد گجر کو انعامات سے نوازا گیا اسی طرح ویسٹرن یونین ٹی ٹونٹی کے بیسٹ بلے بازوں جن میں مجاہد خان، زاہد ملک، اسماعیل بن محفوظ، طیب افضل، رانا عارف جبکہ آر سی ایل کے بیسٹ بیسٹمین گوہر علی، مجاہد، عبدالسلام، رضوان مرزا کو انعامات دئیے گئے، ویسٹرن یونین کپ کے آل راؤنڈر محمد اسامہ شبیر، سید جاوید، شاویز احمد، سید عبدالوہاب، اصغر خان اور آر سی ایل کی جانب سے آل راؤنڈر کے لئے بیجو ویکرے، اسماعیل بن محفوظ، جمشید احمد، محمد رئس، رانا عارف کو انعامات سے نوازا گیا، سمیی فائنل میچز کے مین آف دا میچ کے لئے محمد مبین، یاسر عثمان اسرار بھٹی، ولی خان، سلمان احمد، عاطف علی، عبید اللہ، مدنی غازی، عمران خان، یوسف ہارون، گوہر، شیخ حیدر، عارف علی، اسماعیل بن محفوظ، صاحب خان، منیر عباس، قیصر علی، سید عبدالوہاب، اویس احمد، عثمان ساحل، مجاہد، جمشید، عنصر، اصغر خان اور ریاض کرکٹ لیگ کے گوہر، مبین، اسد، مدنی شیخ، فیصل خان کو انعامات دئیے گئے، ویسٹرن یونین کی رنر اپ ٹرافی لیوپرداس سی سی، ریاض پیسر، گوجرانوالہ سی سی، ساوتھ انڈین سی سی، اور مہران سپاییز کے نام رہی آر سی ایل کی رنر اپ ٹیموں میں یونی ٹچ بوائز الیون، پاک گلیڈی ایٹر، رن رڈیز الیون، خالیلی سٹار الیون کو ٹرافی سے نوازا گیا، جبکہ آخر میں ویسٹرن یونین سیزن کے فائنل میچز کی فاتح ٹیموں جن میں ناظم آباد یونائٹڈ، پنجاب لائینز، ینگ ایورگرین، رائل فائٹر سی سی، پختون خواہ سی سی اور اسی طرح ریاض کرکٹ لیگ کے تحت فائنل جیتنے والی ٹیموں ٹائی ٹین سی سی، ناظم آباد یونائٹیڈ سی سی، پنجاب لائنز، رائل فائٹر اور پختون خواہ الیون کو ٹرافیاں دی گئیں،تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ویسٹرن یونین کے انور حسین خان کا کہنا تھا کہ جیسے جیسے کھلاڑی جیت کا جذبہ لئے آگے بڑھتے ہیں تو ہمارا بھی دل کرتا ہے کہ ہم بھی ان کے لئے بہت سے بہتر مواقعے اور سہولیات فراہم کریں،ڈاکٹر سعید احمد وینس کا کہنا تھا کہ کرکٹ ایک جنون کا نام ہے، اور یہ کھیل ہمیں بہت کچھ سیکھاتا ہے اس لئے میدان کے اندر ہوں یا عملی زندگی میں سپورٹس مین سپرٹ کا مظاہرہ کرنا کھلاڑی پر لازم ہوتا ہے، اس لئے کھیل کو اچھے انداز سے سیکھیں اور ہار کر حوصلہ اور ہمت سے آگے بڑھنے کی لگن نا چھوڑیں کیونکہ ہار جیت معنے نہیں رکھتی اصل چیز لگن ہے، خالد اکرم رانا کا کہنا تھا کہ آج جو شاندار تقریب سجی ہے اسکا سہرا حنیف بابر کے سر جاتا ہے کیونکہ کرکٹ کے فروغ کے لئے حنیف بابر نے ہمیشہ دوسرے سے ایک قدم آگے رکھا ہے اور دن رات اس کھیل کی فروغ اور کھلاڑیوں کی بہتری کے لئے سرگرم عمل رہتے ہیں، قاضی اسحاق میمن نے کہا کہ ہمارے ہاں کرکٹ نے جس طرح عروج پکڑا ہے اور اس سے پورے خطے کے لوگ اس میں دلچسپی لیتے ہیں اس کی کہیں اور مثال نہیں ملتی، جبکہ اب سعودی عرب میں اس کھیل کی فروغ ہوتے دیکھ کر خوشی محسوس کرتا ہوں، سفارت خانہ پاکستان کے کیمونٹی ویلفئیر اتاشی محمود لطیف کا کہنا تھا کہ مجھے یہ دیکھ کر بہت خوشی ہو رہی ہے کہ پاکستانی، انڈین، بنگالی اور سری لنکا کے کھلاڑی ایک جان ہوکر ایک چھت تلے بیٹھے ہیں اور یہی سب سے بڑا سپورٹس مین سپرٹ ہے، اس کے علاوہ جس طرح کم وسائل ہوتے ہوئے سعودی عرب میں کرکٹ فروغ پا رہی ہے اور جس طرح سعودی گورنمنٹ بھی اس میں دلچسپی لے رہی ہے اس سے مزید بہتری آئے گی، پاکستانی کھلاڑی کرکٹ کے میدان میں پہلے بھی نمایاں رہے ہیں اور اب بھی میدان میں بہتر کھیل پیش کرتے ہیں، اور سعودی عرب میں کھلاڑی اس لحاظ سے بھی قابل تعریف ہیں کہ وہ اپنے کام کے علاوہ اس کھیل کو فروغ دینے میں اپنی توانیاں صرف کر رہے ہیں،

Facebook Comments