25ارب کراچی ، 5ارب روپے حیدر آباد کے لئے وفاقی پیکج رواں سال دیں گے : وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی

کراچی (سرزمین نیوز) وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ5 2ارب روپے کراچی ، 5ارب روپے حیدر آباد کو رواں سال وفاقی پیکج دیں گے ، کراچی کے حالات بہتر بنانے کے لئے رینجر ز کو تمام وسائل فراہم کریں گے ، تاجروں کے مسائل سنے پہلے بھی مسائل حل کئے اب مزید تیزی سے حل کریں گے ، ایم کیوایم نے غیر مشروط طور پر جمہوریت کی حمایت کی تھی سیاسی جماعت ہوتے ہوئے ان کی مشکلات کا بھی ازالہ کرنا ہو گا،پارٹی جب تک چاہے گی وزیر اعظم رہوں گا ، ٹی وی دیکھنے کا موقع کم ملتا ہے لیکن تین دنوں جو عوام نے ساتھ دیا ہے سب کے سامنے ہے ۔ ن لیگ سیاسی جماعت ہے اور اسے عوام میں جانے کا حق حاصل ہے ۔ میں نے 28تاریخ کو ایئر بلیو کے بورڈ سے استعفیٰ دیدیا تھا اور اس میں میرے بہت ہی معولی سے شیئرز ہیں وہ تو آپ بازار سے بھی خرید سکتے ہیں.
ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی کے دورے پر گورنر سندھ ، وزیر اعلیٰ سندھ کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ کراچی میں امن قائم کرنے پروزیر داخلہ ، سندھ حکومت ، رینجر ز اور کو رکمانڈر ، کے ساتھ بات چیت کی گئی اور اس میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ رینجرز اپنا کام کرتے رہیں گے اورجو وسائل چاہیے ہوں گے انہیں وفاق فراہم کرتا رہے گا ۔انہوں نے کہا کہ تاجروں کے ساتھ ملاقا ت میں ان کے مسائل سنے ہیں انہوں نے اپنی مشکلات سے آگا ہ کیا ہے ان مسائل کو بھی دور کیا جائیگا ۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف کے پالیسی کو آگے بڑھائیں گے اور ملک کو معاشی ترقی یافتہ بنانے کے لئے کام کر رہے ہیں چاہتے ہیں ہمارے نوجوانوں کو نوکریاں ملیں اور ملک ترقی کرتا رہے ۔
انہوں نے صحافیوں کے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ جس وقت تک پارٹی چاہے گی وزیر اعظم ہو ں اورجہاں تک کراچی کی بات ہے اب18ویں ترمیم میں صوبوں کو فنڈز ٹرانسفر کر دیئے گئے ہیں اور صوبوں کی ذمہ داری ہے کہ وہ اپنے ترقیاتی کام کریں لیکن وفاق نے 25ارب کراچی کے لئے ،5ارب روپے حیدر آباد کے لئے پیکج اس سال دیں گے ۔ ان کا کہنا تھا کہ ٹی وی دیکھنے کا موقع کم ملتا ہے لیکن میاں صاحب کے قافلے کے پچھلے تین دنوں سے جو ہو رہا ہے وہ سب کے سامنے ہیں ، ن لیگ سیاسی جماعت ہے اور اس کا حق ہے کہ وہ عوام میں جائے ۔ جمہوریت کے لئے ایم کیو ایم نے حمایت کی تھی آج ان کے وفد سے بات چیت ہوئی ان کی مشکلات سنی ہیں حل کرنے کی کوشش کریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ غوث علی شاہ میرے جیل کے ساتھی ہیں اور ان سے ملاقات ذاتی قسم کی تھی اور ان کی نیک کواہشات ہمارے ساتھ ہیں ۔
نواز شریف ملکی لیڈر ہیں اور میری پارٹی کے لیڈر ہیں وہ میرے وزیر اعظم نواز شریف ہیں ۔ میں نے 28تاریخ کو ایئر بلیو کے بورڈ سے استعفیٰ دیدیا تھا اور اس میں میرے بہت ہی معولی سے شیئرز ہیں وہ تو آپ بازار سے بھی خرید سکتے ہیں۔ فاروق ستار نے کوئی مطالبہ سامنے نہیں رکھا لیکن انہوں نے اپنی مشکلات سے آگا ہ کیا تھا ۔گورنر صاحب وفاق کے نمائندے ہیں ان کا کوئی سیاسی کردار نہیں ہے اور مجھے اس حوالے سے ان میں کچھ بھی نظر نہیں آیا ۔ نیب کا قانونی جائزہ لینا ہو گا کیونکہ نیب کا قانون وفاقی ہے ان معاملوں کا حل عدالتوں سے ہی ہو ا کرتا ہے اور یہ چیلنج ہو چکا ہے فیصلہ وہیں ہی ہو جائے گا ۔

Facebook Comments