پاکستانی سیاست میں مصروف اور دوسری جانب دنیا بھر کی سٹاک مارکیٹوں میں لوگوں کے کھربوں ڈالر ڈوب گئے، یہ کس وجہ سے ہوا؟ دنیا کی سلامتی کیلئے سب سے بڑا خطرہ سامنے آگیا

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ اور شمالی کوریا کے مابین کشیدگی اپنے نقطہ عروج کو پہنچ چکی ہے، فریقین کے بیانات سے ظاہر ہوتا ہے کہ دونوں طرف سے میزائل داغے جانے کو تیار ہیں۔ یہ کشیدگی دنیا کی سلامتی کے لیے بڑا خطرہ بن چکی ہے اور اس کی سنگینی کا اندازہ اس سے لگایا جا سکتا ہے کہ ان خطرے کے باعث دنیا بھر کی سٹاک مارکیٹوں میں لوگوں کے کھربوں ڈالر ڈوب گئے ہیں اور سرمایہ کار اپنا سرمایہ نکال کر اسے محفوظ کرنے میں لگ گئے ہیں۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق امریکہ اور شمالی کوریا کے درمیان ایٹمی جنگ چھڑنے کا امکان بڑھ جانے کے باعث دنیا بھر کی سٹاک مارکیٹوں میں گزشتہ ایک ہفتے کے دوران لوگوں کے 1ٹریلین ڈالر ز ڈوب چکے ہیں، جس کے باعث سرمایہ کار اپنا سرمایہ واپس نکال کر اسے محفوظ کر رہے ہیں۔
’ہم امریکہ کے خلاف جنگ کیلئے تیار ہیں‘ وہ ملک جس کے لاکھوں لوگ سڑکوں پر آگئے، طبل جنگ بجادیا
سرمایہ کار اس وقت سونا اور جرمنی کے سرکاری بانڈ خریدنے کو ترجیح دے رہے ہیں کیونکہ ان کی نظروں میں اس وقت یہ دنیا میں محفوظ ترین سرمایہ کاری ہے۔اس کے علاوہ سرمایہ کار جاپانی ین اور سوئس فرانک میں بھی سرمایہ کاری کر رہے ہیں جس کے باعث ان دونوں کرنسیوں کی قیمت میں تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے۔ رپورٹ کے مطابق امریکہ اور ایشیاءکی سٹاک مارکیٹ جنگ کے خدشے کے پیش نظر منہ کے بل نیچے گررہی ہیں۔ ڈونلڈٹرمپ کے امریکہ کا صدر منتخب ہونے پر نومبر میں عالمی مارکیٹس اس قدر نیچے گری تھیں، اس کے بعد گزشتہ ہفتہ اب تک کا بدترین ہفتہ رہا ہے۔عالمی سطح پر سٹاک مارکیٹس کی یہ صورتحال سے اشارہ مل رہا ہے کہ دنیا عنقریب ایٹمی جنگ کی لپیٹ میں آنے جا رہی ہے۔

Facebook Comments